Tere Hisar Se Bahar Nikal Gai Hun Main
Catagory: Romantic
Share on Whatsapp


ترے حصار سے باہر نکل گئی ہوں میں
تو ٹھیک کہتا ہے شاید بدل گئی ہوں میں

تجھے خبر نہیں کیسے سراب رستے تھے
خدا کا شکر کہ پھر بھی سنبھل گئی ہوں میں

مرے علاوہ بھی تجھکو عزیز ہے کوئی--
ذرا سی بات پہ ایسے ہی جل گئی ہوں میں

یہ پاؤں جانتے ہیں وقت ہجر کیسا ہے
قدم قدم کسی پتھر میں ڈھل گئی ہوں میں

اٹھالیا ہے ستاروں نے آسماں سر پر
ذرا جو چاند کی خاطر مچل گئی ہوں میں


Posted By: Urdu Shairee On: 1/17/2012 10:27:50 PM
Posting ID is: 54

Share